Welcome to Shiaforum.net

Register now to gain access to all of our features. Once registered and logged in, you will be able to contribute to this site by submitting your own content or replying to existing content. You'll be able to customize your profile, receive reputation points as a reward for submitting content, while also communicating with other members via your own private inbox, plus much more!

This message will be removed once you have signed in.

Sign in to follow this  
Guest

ZANJEER ZANI / QAMA .. DALEEL ??

فیسبک گروپ امام بارگاہ قصر زینبیہ میں ایک

گفتگو کی نشست موضوع "ماتم حسین" سید

حسنین حیدر کاظمی...

تحفہ یا علی ع مدد

الہم صلے علی محمد و آل محمد و عجل فرجہ

پڑھتے رھے نماز جو ماتم کو چھوڑ کر


ایسے نمازیوں سے قضاؑ ھوگیا حسین ع

پاک صاف بدن سے تو سب ھی نماز پڑھتے ھیں

زخمی بدن کیساتھ نماز

یا مولا حسین ع نے ادا کی

یا مولا سجاد ع نے

اور یہ سنت صرف زنجیرزنوں کے نصیب میں ھے.

میں سوچا کرتا تھا 
زنجیرزن بننا 
فائدہ ؟

جبکہ شریعت کہتی ھے کہ خون نجس ھوتا ھے 
نماز نہیں ھوتی

آپ اپنا ھی خون بہا کر کہا حاصل کررھے ھیں ؟

کیا ثابت کرنا چاھتے ھیں ؟

پھر ایک دن بحارالانوار میں جلد نمبر 4 کا مطالعہ 
کرتے ھوئے میں نے پڑھا

یہ تو اللّہ چاھتا ھے کہ غم حسین میں خون بہایا جائے

میں دیکھا

آدم ع حوا کو ڈھونڈتے ڈھونڈتے جب کربلا پہنچے تو پتھر سے ٹھوکر کھائی

خون نکلا

گھبرا کر آسمان کی طرف دیکھا 
مالک ؟

کوئی غلطی ؟ کوئی کوتاھی ؟

جبرائیل نازل ھوا

نہیں آدم کوئی غلطی نہیں

یہ مقام کربلا ھے

جس جگہ تو کھڑا ھے یہ مقتل حسین ع ھے

آدم نے ہوچھا

حسین ع کون؟

کون قتل کرے گا ؟

جواب ملا

جسکی نبوت کے اقرار نے تجھے نبی بنایا

جسکی ولائیت نے تجھے صفی اللّہ بنایا

اسکا بیٹا ھے

پوچھا

میرا خون کیوں نکلا یہاں ؟

جواب ملا

اللّہ چاھتا ھے کہ تیرا خون پہلے اس مٹی کا

حصّہ بنے جہاں حسین ع کا خون گرے گا

پوچھا

قاتل کون ھے حسین ع کا ؟

جواب ملا

یزید لعین تو اب تو اس پر لعنت کر

آدم نے گریہ کیا

لعنت کی

تو پتا چلا

گریہ 
خون بہانا 
لعنت کرنا

سنت آدم ھے اور حکم خدا بھی ھے

منشاء الہٰیہ بھی ھے

پھر میں نے دیکھا

نوح اپنی کشتی پر سوار کربلا پہنچا

کشتی ڈول گئی موج ایسی اٹھی کہ لگتا تھا

کشتی ڈوبے گی

نوح کو بتایا گیا 
یہ کربلا ھے 
پھر وھی سب

لعنت کروائی گئی

پھر ابراھیم ع آئے

گھوڑے کو ٹھوکر لگی

زمین پر گرے

ماتھے کا خون نکلا

پھر وھی سوال جو آدم نے کیئے

پھر وھی جواب جبرائیل نے دئیے

پھر وھی گریہ

پھر وھی خون

پھر وہی لعنت

پھر موسیٰ آئے 
پیر کی جوتی ٹوٹی 
پیر میں کانٹے چبھے

خون جاری ھوا 
پھر وھی سوال 
پھر وھی جواب 
پھر وھی گریہ 
پھر وھی خون 
پھر وھی لعنت

تو سمجھ میں آیا

اللّہ تو اپنے انبیاء سے تین کاموں کا تقاضا کر رھا ھے

1- حسین ع پر گریا کرو 
2- حسین ع کے لیئے خون بہاؤ 
3- یزید لعین پر لعنت کرو 
تو جو انبیاء پر ایمان رکھتا ھے 
انکی سنت پر عمل کرتا ھے 
وھی تو مومن ھے

پھر میں نے سوچا


کسی سے محبت کی انتہا کیا ھے ؟

جواب ملا 
جان دینا 
سوچا کہ خودکشی تو حرام ھے 
اب کیا کروں ؟

دل نے آواز دی

میرا ھاتھ پکڑ چل تجھے کرن لے چلوں

ایک محب ھے


نام اویس قرنی ھے

تیری طرح اس نے بھی رسول ص کو ساری زندگی آنکھوں سے نہیں دیکھا تھا

بس پتا چلا کہ جنگ احد میں رسول ص کے دو دانت شہید ھوگئے 
اس نے اپنے دانت توڑ لیئے خون بہایا اپنا

ادھر قرآن نے آواز دی

او پیر بھائی

ادھر آ 
میں بتاتا ھوں


میں نے یاعلی ع مدد کہا


اس نے سورۃ یوسف کھولی 
یہ دیکھ

" یوسف کی محبت میں عورتوں نے اپنی انگلیاں کاٹ لیں تھیں " 
خون بہایا


کیا اللّہ نے انکی مذمت کی ؟ 
نہیں نا ؟


پورے قرآن میں کہیں نہیں 
بلکہ


انکو مثال بنا دیا

حجت خدا کی محبت میں خون بہانا پسند ھے رب کو

میں خوش ھوگیا

سمجھ آگیا

مجھے اپنی محبت کا ثبوت کیسے دینا ھے ؟

اتنے میں کربلا سے حبیب ابن مظاھر کی آواز آئی

او پیر بھائی 
جنکی محبت میں قتل ھونے کے بعد عام مردوں

کی طرح ھم نجس نہیں ھوتے غسل میت کی

ضرورت نہیں ھوتی

اسی طرح

انہی کی محبت میں نکلا ھوا خون


نجس نہیں ھوتا

نماز ھوجاتی ھے

مولوی کو چھوڑ

علی علی ع کر

لبّیک یا حسین ع

سلام یا حسین ع

حئ علیٰ عزاء الحسین ع

18527286_275298686266174_1254133575630763643_o.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

Sign in to follow this  

Welcome To Shia Forum

At Ajareresalat.net, we have one unifying goal: to seek out the Truth. We welcome individuals from all walks of life and and there exists a diverse mix of cultures and ideologies amongst our members.