Jump to content

Search the Community

Showing results for tags 'bibi fatima'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • RECEPTION AREA
    • News and Announcements
    • Introduce Yourself
    • Feedback, Ideas and Questions
  • SHIA ISLAMIC FORUMS
    • Monthly Forums
    • Events Archive
  • ONLINE SHIA SCHOLARS
    • Questions & Answers
  • COMMUNITY DISCUSSIONS
    • General Discussions
    • Prophets and Ahlulbayt Forum
    • Hazrat Imam Mahdi (ajtf)
    • Rightful Companions
    • Shia Islam and Other Religions
    • Islamic Research & Studies
    • Social, Family and Marriage Issues
    • People, Ideas and Places
    • Women's Forums
    • Multilingual Forums
  • POLITICS, CURRENT ISSUES AND HEADLINES
    • General Politics and Current Issues
    • Shia News From All Over The World
  • HOLY QURAN,DUAS,HADITH FORUMS
    • Quran, Hadith, & Duas
  • ONLINE SHIA COMMUNITY
    • Shia Chat
  • SHIA ISLAMIC RESOURCES AND MATERIAL
    • Shia Multimedia
    • Shia Islamic Books
  • OFF-TOPIC
    • Chit Chat
    • Medical Section
  • COMPUTER & MOBILES
    • Computer Section
    • Software Tutorials
    • Mobile Section

Categories

  • General Video
    • Majlis and Lecture
    • Documentary & Movie's
    • Qasiday
    • Nohay,Soz o Salam
    • Khutbaat e Masoomeen
    • News
  • General Audio's
    • Manqbat Album
    • Nohay Album
    • Qasiday
    • Khutbaat e Masoomeen

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Found 2 results

  1. جنابِ سیدہ کی فریادفاطمہ زہرا علیہاالسلام فریاد کرنے لگیں، اے بابا، اے خدا کے رسول (ص)۔ عمر بن خطاب نے ان کو ہٹانے کیلئے الٹی تلوار ان کے پہلو پر ماری۔ سیدہؑ نے پھر فریاد کی ہائے میرے بابا، عمر بن خطاب نے کوڑا ان کے ہاتھ پر مارا۔ سیدہؑ نے پھر فریاد بلند کی۔ یا رسول اللہ (ص) آپ کے بعد ابوبکر و عمر نے کس قدر بُرا سلوک کیا ہے۔ جناب حضرت علیؑ نے دوڑ کر عمر بن خطاب کو گریبان سے پکڑا اور اٹھا کر زمین پر دے مارا۔ جس سے اس کی ناک اور گردن زخمی ہوئی۔ قتل کرنا ہی چاہتے تھے کہ آنحضرت (ص) کی وصیت یاد آگئی۔ جو آُپ نے جناب علیؑ کو صبر کرنے کی وصیت کی تھی۔ جناب حضرت علیؑ نے فرمایا، اے ابن ضحاک، اللہ تعالیٰ کی قسم جس نے محمد (ص) کو نبوت بخشی ہے۔ اگر خدا کا لکھا ہوا اور اگر رسول اللہ (ص) کا مجھ سے عہد نہ ہوتا تو تم دیکھ لیتے کہ میرے گھر میں گھس نہیں سکتے تھے۔ عمر ابن خطاب نے لوگوں کو آواز دی تو لوگ ان کی مدد کو اندر گھس آئے، جناب حضرت علیؑ نے اپنی تلوار کی طرف رخ کیا۔ لوگوں نے جناب حضرت علیؑ کو ہر طرف سے گھیر کر گلے میں کپڑا ڈال کر بے بس کردیا۔ یہ دیکھ کر دروازے کے قریب جناب فاطمہ علیہا السلام درمیان میں آگئیں۔ قنفذ ملعون نے ان کے بازو پر اتنے زور سے کوڑا مارا کہ وفات کے وقت بھی گومڑ موجود رہا۔ یہ لوگ جناب امیرؑ کو نکال کر ابو بکر بن قحافہ کے پاس لیگئے، عمر بن خطاب تلوار نکال کر حضرت علیؑ کے سر پر کھڑے ہوگئے وہاں پہلے سے خالد بن ولید، ابو عبیدہ جراح، ابو حذیفہ کا غلام سالم، معاذ بن ببل، مغیرہ بن شیبہ، بشیر بن سعد اور دوسرے تمام لوگ ابوبکر بن قحافہ کے پاس ہتھیار لگائے موجود تھے۔ سلیمؓ بن قیس ہلالی نے سلمانؓ فارسی سے پوچھا یہ کیا واقعہ ہے؟ کیا یہ لوگ واقعی جنابِ سیدہؑ کے گھر بلا اجازت داخل ہوگئے تھے؟۔ سلمانؓ فارسی نے کہا اللہ کی قسم وہ اندر چلے گئے تھے اور جنابِ سیدہؑ فرما رہی تھیں اے اللہ کے رسول (ص) آُپ کے بعد ابو بکر بن قحافہ و عمر نے ہمارے ساتھ اچھا سلوک نہ کیا، ابھی تو آُپ کی آنکھیں بھی قبر میں بند نہ ہوئی تھیں، قنفذ نے جنابِ فاطمہ علیہاالسلام کو کوڑا مارنے کے بعد اتنی زور سے دھکا دیا تھا کہ گِر کر ان کی پسلی ٹوٹ گئی تھی اور جناب محسنؑ کا حمل ساقط ہوگیا تھا۔ وہ صاحب فراش ہوگئیں اور انہی زخموں کی وجہ سے شہید ہوئیں۔ ان پر اللہ کا درود و سلام ہو اور ان کے قاتلین پر اللہ کی لعنت ہو۔ کتاب سلیمؓ بن قیس ہلالی (متوفی ۷۰ ھ)
  2. کلکی پر بی بی فاطمہ ؑ کا ذکرکلکی پر ان جو ہندوؤں کی الہا می کتاب مشہور ہے اس میں تحریر ہے کہ آخری زمانے ایک دیوتا آیئگا جو شنبل دیپ میں پیدا ہوگاوہ پہاڑ کی غار میں خدا کی عبادت کریگا اس کے وطن والے اس کو نکال دیں گے اور وہ شمالی پہاڑ کی طرف چلا جائے گا اس کی ماں کا نام اوم مستی ہوگا۔ اس کی ایک لڑکی جو تمام دنیا کے استریوں کی سردار ہو گی۔جب وہ ظاہر ہو تو تم اپنے سراس کے قدموں میں رکھ دینا کیونکہ نجات کا راستہ اسی ملے گا۔شنبل دیپ یعنی کھجوروں والا جزیرہ اور وہ جزیرۃ العرب ہے۔اور پہاڑ کے غار میں عبادت یعنی شعب ابی طالب میں آپؐ نے کئی سال عبادت کی۔ وطن والوں نے نکال دیا اورآپؐ ہجرت کر کے مکہ سے مدینہ کی طرف تشریف لے گئے جو شمال میں ہے اور پہاڑی علاقہ ہے۔آپؐ کی ماں کا نام اوم مستی یعنی امن والی عورت یعنی آمنہ ہے۔اور باپ کا نام دشنوداس یعنی دشنو کے معنی خدا اور داس کے معنی بندہ،خدا کا بندہ یعنی عبداللہ۔اور آپ کی لڑکی تمام عورتوں کی سردار یعنی فاطمہؑ سیدۃ النساء العالمین ہیںتاریخ اسلام صفحہ 171 جلد 2

Footer title

This content can be configured within your theme settings in your ACP. You can add any HTML including images, paragraphs and lists.

Footer title

This is an example of a list.

Footer title

This content can be configured within your theme settings in your ACP. You can add any HTML including images, paragraphs and lists.

Footer title

This content can be configured within your theme settings in your ACP. You can add any HTML including images, paragraphs and lists.

×